دبئی میں پی ٹی آئی کے اندر احتساب کے حامی ورکرزا ور رہنماؤں کی خصوصی تقریب


01

دبئی (رپورٹ : ذوالفقارشاہ )سپریم کورٹ پاکستان کے سابق سینئر جج جسٹس(ر) وجیہہ الدین احمد نے کہا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف کی ہر نشست پر ہار کے ذمہ دار خود پارٹی کے رہنماء ہیں جو ٹکٹ کی تقسیم اپنوں میں اور ضرورتوں کے تحت کررہے تھے انہوں نے کہا کہ خیبر پختونخوا کی حکومت ایک ماڈل حکومت پیش کرنے کو ملی تھی جہاں کام اب صرف دعوؤں کی حد تک ہوتاہے انہوں نے کہا کہ عمران خان کو مجھ سے گھبرانے کی ضرورت نہیں میں کسی پارٹی الیکشن میں حصہ لینے والا نہیں میں پارٹی کے ساتھ مخلص ہوں اس لیے سچی باتیں لوگوں کی کڑوی لگتی ہیں ان خیالات کا اظہارانہوں نے یہاں دبئی میں تحریک انصاف میں احتساب کے عمل کے حامی افراد پر مشتمل پارٹی ورکروں اور رہنماؤں کے زیراہتما م منعقدہ ایک خصوصی تقریب سے خطاب کے دوران کیا اس کو پی ٹی آئی آڈیالوجیکل کا نام دیا گیا۔اس موقع پر مریم ووٹو ‘ فضل مروت ‘اور انکی ٹیم کی کثیر تعداد تقریب میں شریک تھی اس پروگرام کو ’’افکار اقبال ‘‘کے موضوع پر بات کرنے کے لیے متعارف کرایا گیا تھا مگر جب جسٹس وجیہہ الدین احمد نے اپنی تقریر شروع کی تو لگا کہ وہ پاکستان میں پارٹی کی جانب سے ان کے خلاف ہوئے اقدامات کی وضاحت کررہے ہیں اورتقریر میں پارٹی سربراہان کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا۔وجیہہ الدین احمد نے کہا کہ KPKحکومت نے اعلان کیا تھا کہ موسمی حالات کا مقابلہ کرنے کے لیے شجر کاری کرینگے مگر وہ ناکام رہے یہی نہیں ان کے ہر کام صرف دعوے ہی ثابت ہوئے ہیں انہوں نے کہا کہ پرویز خٹک اور اسد قیصر اپنی من مانی کرکے امیدوار لائے اور پارٹی پر مسلط کیے یہی حال پنجاب میں رہا پرائیویٹ ہوٹل رومز میں امیدواروں کو ٹکٹ دینے کے فیصلے ہوتے رہے یہی وجہ ہے کہ مقبول ترین پارٹی کے امیدوار ہر نشست پر ہارتے رہے۔انہوں نے کہا کہ پیراشوٹ سے اترنے والے امیدوار پارٹی پر حاوی ہوچکے ہیں ۔انہوں نے واضح کیا کہ وہ عمران خان کی قدر و عزت کرتے ہیں ان کے مخالف نہیں اور نہ ہی پارٹی الیکشن میں ان کے مد مقابل کبھی کھڑے ہونگے ان کو مجھ سے ڈرنے کی ضرورت نہیں۔تقریب کے اختتام پر پی ٹی آئی کے مقامی رہنماؤں ناصر خان ‘ شاہد نذیر وڑائچ اور ان کے ساتھیوں نے وجیہہ الدین احمد کے عمران خان کے خلاف بولنے پر تکرار شروع کردی اور اسے پی ٹی آئی مخالف تقریب کا نام دیا جس پر آرگنائزر مریم ووٹو نے انکو تقریب سے نکل جانے کا کہا اور کہا کہ وہ بن بلائے آئے ہیں جب دعوت نہیں دی تو آپ کو نہیں آنا چاہیے تھا۔ واضح ہو کہ وجیہہ الدین احمد نے انتہائی مدلل انداز میں پارٹی کی کمزور پوزیشن واضح کی اور اس کمزوری کو پارٹی کے لیے نقصان دہ قرار دیا جس پر اعلیٰ قیاد ت سے فوری طورپر ایکشن لینے کا مطالبہ بھی کیا ۔تقریب کے اختتام پر دبئی میں صحافت سے جڑے جرنلسٹس شیراز مغل ‘ باسط ‘زمرد بونیری‘صبط عارف اور حافظ ذاہد علی کو ایوارڈ سے نوازا گیا اس کے ساتھ کمیونٹی کے لیے ممتاز خدمات کے اعتراف میں مقامی کاروباری شخصیت محمد سعیدخان کو خصوصی ایوارڈ سے نوازا گیا۔اس تقریب کی خاص بات یہ بھی تھی کہ اس میں مختلف سیاسی جماعتوں سے تعلق رکھنے والے افراد نے بھی شرکت کی جس میں ممتاز یوسف زئی‘شیر اکبرآفریدی‘چوہدری امجد اقبال امجد‘ملک یاسر امتیاز اعوان ‘یوسف دورانیے اورجاوید خٹک بھی شامل تھے۔

1 02 2

Advertisements